Important Tips for Ramadan Month ماہ رمضان کیلئے اہم تجاویز

Ramadan Tips

رمضان میں کیا کھائیں،کب سوئیں اور کیسے ورزش کریں

بے شک ماہِ رمضان بڑابا برکت اور رحمتوں والا مہینہ ہے۔ اس ماہ میں اللہ تعالیٰ کی جانب سے ہم سب پر بے شمار رحمتیں نازل کی جاتی ہیں۔اللہ تعالیٰ ہمیشہ اپنے بندوں پر اپنا رحم بنائے رکھتا ہے۔لیکن بعض اوقات وہ اپنے بندوں کا امتحان بھی لیتا ہے اسی طرح ماہ رمضان کا مہینہ بھی اللہ تعالیٰ کی جانب سے اپنے بندوں کیلئے امتحان ہے،لیکن اس امتحان کے بدلے میں ہم پر بے شمار رحمتیں بھی نازل کی جاتی ہیں۔ اس مہینے میں تمام مسلمان اللہ تعالیٰ کیلئے سحری سے افطاری تک بغیر کچھ کھائے پیئے رہتے ہیں اور پورا مہینہ اللہ تعالیٰ کی عبادت کرتے۔

سحری اور افطاری لیے مفید کھانے:۔

سحری میں کھانے والی اشیاء

فائبر اور کاربوہائیڈریٹس والی غذائیں،مثلاًدالیں اور اناج وغیرہ۔

ڈیری مصنوعات مثلاًدودھ،دہی،اورانڈے وغیرہ۔

میوے مثلاًبادام،پستہ اور اخروٹ وغیرہ۔

افطاری میں کھانے والی اشیاء

پوٹاشیم سے بھرے پھل،مثلاًکھجور،انگور،خوبانی وغیرہ۔

انگوروں کا رس،سنگترہ کا جوس اورخوبانی کا جوس وغیرہ۔

سبزیاں مثلاًپالک،آلو،کدو،مٹر اور کھیرے وغیرہ۔

سحری اور افطاری کیلئے مفید مشورے:۔

  1. سحری کو یقینی طورپر صحت بخش ہو نا چاہیے تاکہ کئی گھنٹوں تک آپ کو توانائی فراہم ہوسکے۔ ایسے کھانے کھائیں جس میں زیادہ مقدار میں فائبر اور کاربوہائیڈریٹ ہو،مثلاً دالیں اور اناج وغیرہ۔یہ غذائیں ہضم ہونے میں کافی وقت لیتی ہے۔اس طرح گھنٹوں آپ کے جسم کو ایندھن فراہم ہوتا رہے گا۔
  2. سحری میں خاص طورپر دودھ، دہی اور لسّی وغیرہ کا استعمال کر یں۔ ان چیزوں کا استعمال بھوک اورپیاس میں کمی لاتاہے۔
  3. صبح فجر کی آذان سے آدھے سے ایک گھنٹہ پہلے کھانا کھا لیں۔اور آذان سے 5 منٹ پہلے ایک سے دوگلاس پانی پیئے،کیونکہ کھانے کے فوراً بعد پانی پینا صحت کیلئے مضر ہے۔
  4. سحری میں نمکین اور مصالحے دار کھانوں کا استعمال نہ کریں،کیونکہ ان سے پیاس میں اضافہ ہو تا ہے۔
  5. سبزیوں کا استعمال کریں۔سبزیوں میں قدرتی طور پر پانی اور فائبر ہوتا ہے۔جس سے آپ کو بھوک اور پیاس کا احساس کم ہوتا ہے۔
  6. افطاری کے وقت کھجور سے روزہ کھولیں اور زیادہ پانی نہ پیئے۔زیادہ پانی ایک ساتھ پینے سے آپ کی طبیعت خراب ہو سکتی ہے۔آپ کو چاہیے کہ افطاری کے ہر آدھے گھنٹے بعد ایک گلاس پانی پیئیں اور اپنی پانی کی ضرورت کو پورا کریں۔
  7. افطاری میں کم کھائیں تاکہ آپ رات کا کھانا کھا سکے۔
  8. سموسے،پکوڑے اور مصنوعی مشروبات جیسی مضر صحت اشیاء کا استعمال نہ کریں۔
  9. افطاری میں کولڈڈرنکس اور مصنوعی مشروبات کی بجائے قدرتی پھلوں کے جوسز کا استعمال کریں۔
  10. رات کے کھانے میں مصالحے دار کھانوں کی جگہ دال اور رروٹی کھائیں، اور اگر آپ چاول کھانا چا ہتے ہیں تو پیلے چاولوں کا استعمال کریں۔
  11. روزوں میں اپنی پانی کی ضروریات کا خاص خیال رکھیں۔زیادہ پانی پینے سے جلد تروتازہ رہتی ہے۔صبح سحری کے وقت اور شام کو افطاری کے بعد اعتدال کے ساتھ خوب پانی پئیں۔
  12. روزہ رکھنے کی وجہ سے ہمیں بہت زیادہ بھوک لگتی ہے لیکن اس کا یہ مطلب بالکل بھی نہیں ہے کہ آپ سحری یا افطاری میں بہت زیادہ کھانا کھائیں۔بلکہ آپ کو توازن میں ہی کھانا چاہیے۔

رمضان میں سونے کے اوقات:-

ایک صحت مند انسان کیلئے روزانہ7 سے9 گھنٹے نیند لینا ضروری ہے۔نیند انسانی جسم کو بہتر طور پر کام کرنے میں مدد کرتی ہے۔پورے دن کی تھکاوٹ کو دور کرنے کیلئے انسانی جسم کو آرام کی حالت میں جانے کی ضرورت ہوتی ہے۔عام طور پر ہم رات کو اپنی نیند پوری کرلیتے ہیں،لیکن رمضان میں ہمیں یہ موقع نہیں مل پاتا۔کیونکہ رمضان میں مختلف سرگرمیوں کی وجہ سے ہمیں جاگنا پڑتا ہے۔اس لیے ہمیں چاہیے کہ ہم رمضان میں اپنی نیند کو پورا کرنے کیلئے کوئی ایسے اوقات کار بنائیں کہ ہماری روزمرہ کی نیند کی ضرورت پوری ہوجائے۔

رات کو 11:30 تک لازماًسوجائیں،کیونکہ سحری کیلئے صبح جلدی اُٹھنا ہوتا ہے۔رمضان میں دوپہر کے وقت تھوڑی دیر کیلئے سوجائیں اس سے آپ کی روزانہ کی نیند پوری ہو جائے گی اور آپ کوسحری میں جلدی اٹھنے میں بھی مدد ملے گی۔ کھانا کھانے کے فوراً بعد مت سوئیں بلکہ تھوڑا چہل قدمی کریں تاکہ کھانا ہضم ہو جائے۔

رمضان میں ورزش:-

رمضان میں ورزش کرنا آسان نہیں ہوتا،کیونکہ روزے کی وجہ سے ہماری توانائی کم ہوجاتی ہے۔عام دنوں میں ورزش کرنے والے افراد رمضان کے آتے ہی اس سوچ میں پڑجاتے ہیں کہ رمضان میں ورزش کرنا مشکل ہوگا۔ایسے افراد کیلئے اچھی خبر ہے،آپ رمضان میں بھی ورزش کرسکتے ہیں۔لیکن اس کیلئے آپ کو یہ جاننا ضروری ہے کہ آپ کس وقت اور کس قسم کی ورزش کرنی چاہیے۔

ڈاکٹر جاویدشاہ (Physician Specialist in Dubai)نے رمضان میں رات کو نمازتراویح کے بعدورزش کرنے کی صلح دی ہے۔ان کے مطابق اس وقت تک ہم کھانا کھاچکے ہوتے ہیں اور ہمارے جسم میں توانائی پیداہوجاتی ہے،ورزش کے دوران مختلف جوسز کا استعمال بہتر رہے گا۔

رمضان میں کوئی بھی ایسی ورزش نہ کریں جس میں آپ کی نبض کی شرح 150 فی منٹ سے اوپر جائے،بلکہ آپ کو ہلکی پھلکی ورزشیں مثلاً سائیکلنگ،کراس ٹرینگ،سلوجوگنگ(آہستہ چلنے والی ورزش،بریسک واک(تیز چلنے والی ورزش)وغیرہ کرنی چاہیے۔ اس مہینے میں اپنی ورزش کے معمول کو برقرار رکھنے کیلئے آپ کو سحری میں کاربوہائیڈریٹ والی غذائیں اور افطاری کے بعد پروٹین والی غذائیں کھانے کی ضرورت ہے۔مزید اپنی پانی کی ضرورت کو بھی پورا کرنے کی ضرورت ہے،کیونکہ اس قسم کی ورزشوں میں کافی مقدار میں پانی پسینے کی صورت میں ہمارے جسم سے خارج ہوجاتا ہے۔

مزیدار اور سپائسی کھانے تو ہم بعد میں بھی کھا سکتے ہیں لیکن اس ایک ماہ میں خاص طور پر ہمیں صبر سے کام لینا چاہیے۔کیونکہ یہ ماہ ہے ہی صبر اور شکر کے امتحان کا۔ہمیں چاہیے کہ ہم اللہ تعالیٰ کی زیادہ سے زیادہ عبادت کرے اور اس کا شکر ادا کرتے رہے۔اس کے علاوہ اپنے سونے کے اوقات کو بہتر بنائیں اور رمضان میں اپنی ورزش کو اوپر بتائے ہوئے طریقے سے جاری رکھیں۔ ان سب تجاویز پرعمل کر نے سے انشاء اللہ آپ کو ماہ ِرمضان کے با برکت روزے رکھنے میں آسانی ہو گی۔